ڈاکٹر نے ہرنی کے مرض میں مبتلا 9 سالہ غریب بچے کو ایک سال بعد آپریشن کیلئے آنے کی پرچی تھما دی،بچہ تکلیف میں ہے علاج کرانے کہاں جاؤں، باپ کی دہائی

مانسہرہ(این این آئی) کنگ عبداللہ ٹیچنگ ہسپتال مانسہرہ کے ڈاکٹر صلاح الدین شاہ نے ہرنی کے مرض میں مبتلا 9 سالہ غریب بچے کو ایک سال بعد آپریشن کے لئے آنے کی پرچی تھما دی،مانسہرہ کے علاقے بھیرکنڈ کا رہائشی سید ابرار شاہ اپنے 9 سالہ بچے کو تین روز تک اسپتال میں گماتا رہا۔ مگر اس غریب بے بس اور بے سہارا شخص کی طرف کسی ڈاکٹر نے کوئی توجہ نہ دی۔

آخر کار متاثرہ شخص اپنے بچے کو لے کر ڈاکٹر کے کمرے میں داخل ہوگیا،ڈاکٹر نے بچے کی رپورٹس چیک کیں اور اسے ایک سال بعد آپریشن کے لئے تاریخ لکھ کر دے دی۔غریب متاثرہ شخص کا کہنا ہے کہ میں خود مرگی کے مرض میں مبتلا ہوں تین روز تک میں اسپتال کے چکر کاٹتا رہا مجھے ہر دن صبح آٹھ بجے اسپتال پہنچنے کا کہا جاتا رہا جب میں جمعرات کواسپتال پہنچا دس بجے کے قریب ڈاکٹر صاحب اپنے کمرے میں انٹر ہوئے بڑی مشکل سے میں ڈاکٹر صاحب کے کمرے میں بچے کو لے کر داخل ہوا تو میرے ہاتھ میں پکڑی ہوئی فائل جس میں میرے بچے کی میڈیکل رپورٹس وغیرہ تھیں ڈاکٹر صلاح الدین نے دیکھی اور ان پر ایک سال کا ٹائم لکھ کے مجھے دے دیا میرا بچہ تکلیف میں مبتلا ہے پرائیویٹ طور پر میں اس کا آپریٹ بھی نہیں کروا سکتا مجھے بتایا جائے کہ میں اپنے بچے کا علاج کروانے کے لیے کہاں جاؤں۔ کنگ عبداللہ ٹیچنگ ہسپتال مانسہرہ کے ڈاکٹر صلاح الدین شاہ نے ہرنی کے مرض میں مبتلا 9 سالہ غریب بچے کو ایک سال بعد آپریشن کے لئے آنے کی پرچی تھما دی،مانسہرہ کے علاقے بھیرکنڈ کا رہائشی سید ابرار شاہ اپنے 9 سالہ بچے کو تین روز تک اسپتال میں گماتا رہا مگر اس غریب بے بس اور بے سہارا شخص کی طرف کسی ڈاکٹر نے کوئی توجہ نہ دی۔

 

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *